091-921 6336
     info@fdma.gov.pk

Meetings

DG FDMA Nasir Durrani Talking to a delegation of North Waziristan TDPs headed by Malik Ghulam Khan Wazir. The delegation discussed issues of TDPs and DG Nasir Durrani assured them for quick resolution of all the issues facing by TDPs of tribal areas. ( Photo by Ihsan Dawar PRO FDMA)

 

 

یف ڈی ایم اے نے متا ئثرین کی واپسی پر ملنے والی امداد کے بارے میں نئی پالیسی کا اعلان کر دیا

 

 

پشاور ( پ ر) ڈائریکٹر جنرل فاٹا ڈٰیزاسٹر میجمینٹ اتھارٹی ( ایف ڈی ایم اے) نے قبائلی علاقوں کے واپس جانے والے متا ئثرین کو دئے جانے والے 35 ہزار نقد امداد کی رقم کے بارے میں نئی پالیسی کا اعلان کیا ہے جس کے مطابق سابقہ پالیسی کے بر عکس امدادی رقم چھ ماہ گذرنے کے بعد بھی متائثرین سیم کے ذریعے وصول کر سکے گے ۔ ڈ جی ایف ڈی ایم اے ناصر دُ رانی کے دفتر سے جاری ایک اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ سال 2016 میں بنا ئی گئی ایک پالیسی کے مطابق واپسی کے وقت دیا جانے والا امدادی رقم کو اگر چھ ماہ کے اندر اندر نہ لیا گیا تو مذکورہ رقم واپس ایف ڈی ایم اے کے اکاؤنٹ میں چلا جا تا لیکن موجودہ پالیسی کے مطابق ایسا نہیں ہوگا بلکہ متا ئثرین جب چاہے اپنی رقم کو اے ٹی ایم کے ذریعے سے وصول کرسکے گے۔ اس بارے میں ڈائکٹر جنرل ایف ڈی ایم اے نے بتا یا کہ ہزاروں قبائلی متا ئثرین کی رقوم سابقہ پالیسی کی وجہ سے پھنسی ہو ئی تھیں اور بے شمار شکایات روزانہ موصول ہو رہی تھی جس پر غور کرنے کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ جن متائثرین کے کارڈز میں کو ئی مسئلہ ہو اور جو چھ ماہ گذرنے کے بعد بھی اپنی رقوم وصول نہ کرسکے ان کی رقوم کو واپس نہیں کیا جا ئے گا بلکہ وہ ان کے اکاؤنٹس میں محفوظ رہینگے ۔اعلامیہ جاری ہو نے کے بعد ھنگامی بنیادوں پر متا ئثرین کی پھنسی ہو ئی رقوم کو ان کے متعلقہ اکاؤنٹس میں جمع کرانے کیلئے کام شروع کر دیا گیا۔ دریں اثناء شمالی وزیرستان کے متا ثرین کی ڈھائی سو سے زائد بلاک سیموں کو بھی فوری طور پر کھولنے کا حکم ہوا ہے جس کے بعد اُ ن متا ئثرین کیلئے بھی ماہانہ راشن اور 12ہزار کی امدادی رقم ملنا شروع ہو جا ئے گی ۔

 

 


 

 

شاور ( پ ر ) فاٹا ڈیزاسٹر میجمینٹ اتھارٹی ( ایف ڈی ایم اے) کے نئے ڈائریکٹر جنرل ناصر دُرانی نے چارج سنبھال کر کام شروع کر دیا ۔ ایف ڈی ایم اے کے ترجمان کی طرف سے میڈیا کو جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ سابق ڈی جی ایف ڈی ایم اے محمود اسلم وزیر کے بطور ڈپٹی کمشنر خیبر تبادلے کے بعد سے اب تک ایف ڈی ایم اے میں ڈی جی کی سیٹ خالی تھی۔ چیف سیکرٹری خیبر پختونخواہ کے دفتر سے جاری ایک حکمنامے کے ذریعے ایف ڈی ایم اے کے ڈائریکٹر اپریشن ناصر درانی کو ڈی جی ایف ڈی ایم اے کا اضافی چارج سونپا گیا ہے جنھوں نے بدھ کے روز سے چارج سنبھال کر کام شروع کر دیا ہے ۔ اس موقع پرنئے تعینات ہونے والے ڈی جی ناصر درانی نےاقوام متحدہ کے ذیلی ادارے برائے انسانی ہمدردی اوچا کے نمائندوں سے اپنے دفتر میں ایک اہم اجلاس میں بکاخیل ٹی ڈی پیز کیمپ میں موسم سرما کیلئے سردی سے بچا ؤ کیلئے بکا خیل کیمپ اور ان قبائلی علاقوں کیلئے جس کو حال ہی میں واپسی ہو ئی ہے اور سردی پڑنے کا امکان ہے، کیلئے گرم خیمے اور دیگر اشیا ئے ضروریہ کی فراہمی پر بحث کی گئی ۔ اوچا کے عہدیداروں نے ڈی جی ایف ڈی ایم کو ان اشیاء کی فوری فراہمی کا یقین دلا یا اور کہا کہ اس مہنیے کے اختتام تک مذکورہ اشیاء تمام ضرورت مندوں کو فراہم کی جا ئے گی ۔ چارچ سنبھالنے کے بعد ڈی جی ایف ڈی ایم اے ناصر درانی نے بتا یا کہ شمالی وزیرستان کے متا ثرین کو 12000 روپے کی ماہوار قسط ائندہ دو دن میں جاری کی جا ئے گی جس کا ایف ڈی ایم اے نے ان کے ساتھ وعدہ کیا تھا۔ ناصر درانی نے یہ بھی کہا کہ جن قبائلی علاقوں میں شدت کی سردی پڑتی ہے وہاں کے سکولوں میں پڑھنے والے بچوں کوسردی سے بچا ؤ کیلئے گرم سامان کی فراہمی کیلئے ھنگامی بنیا دوں پر انتظامات کئے جا ئینگے

فاٹا ڈیزاسٹر مینیجمینٹ اتھارٹی ( ایف ڈی ایم اے ) نے قدرتی افات کو کم کرنے کا دن منا یا جس میں ایف ڈٰ ایم اے کے تمام ملازمین اور قبائلی علاقوں سے بے گھر ہو نے والے قبائلی متا ئثرین کی ایک کثیر تعداد نے حصہ لیا ۔ اس سلسلے میں ایف ڈی ایم اے کے دفتر میں ایک پر وقار تقریب منعقد ہو ئی جس کے مہمان خصوصی ایف ڈی ایم اے کے ڈائریکٹر ایڈمن ریاض داوڑ تھے ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر اپریشن ناصر درانی کے علاوہ دیگر اعلی حکام بھی موجود تھے ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے ریاض داوڑ نے کہا کہ اس دن کو منانے کا مقصد قبائلی عوام میں قدرتی افات کے اثرات کو کم سے کم کرنے کے بارے میں اگہی بیدار کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انسان ابھی اتنا ترقی یافتہ نہیں ہوا کہ قدرتی افات کا راستہ روک سکے تاہم اس کے اثرات کو کم سے کم کرنے کیلئے جدو جہد کی اشد ضرورت ہے کیونکہ موسمیاتی تبدیلیوں کے ساتھ ساتھ قدرتی افات کی سنگینی میں بھی اضافہ ہوتا رہا ہے ۔ ریاض داوڑ نے کہا کہ نہ صرف قدرتی افات بلکہ انسانوں کے لا ئے ہو ئے افات بھی ہمارے لیے ایک چیلنج ہیں اور ایف ڈی ایم اے کے تمام ملازمین کا فرض ہے کہ وہ قبائلی علاقوں میں ہر قسم کے افات کے اثرات کو کم سے کم کرنے کیلئے اپنے فرائض خوش اسلوبی سے انجام دیں ۔ انہوں نے ملازمین پر زور دیا کہ متا ئثرین کے مسائل کے حل میں کسی قسم کی غفلت نہ کریں ۔ انہوں نے ملازمین پر واضح کیا کہ قبائلی عوام کے مسائل میں غفلت برتنے والوں کے ساتھ کسی قسم کی کو ئی رعایت نہیں برتی جا ئے گی

 

 

قبائلی علاقوں کے تمام بے گھر افراد با لخصوص شمالی وزیرستان کے آ ئی ڈی پیز کے مسائل کو ترجیحی بنیا دوں پر حل کرینگے اور اس سلسلے میں کسی قسم کی کو ئی کو تاہی برداشت نہیں کی جا ئے گی ۔ متا ئثرین کے ایف ڈی ایم اے کے ذمہ بقایا تمام واجبات ، بند سیموں کا مسئلہ ، بکا خیل کیمپ کے مسائل اور واپسی سمیت تمام مسائل کے بارے میں متعلقہ حکام کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں اور متا ئثرین کو بہت جلد خوشخبری ملے گی ۔ ان خیالات کا ظہار ڈائریکٹر جنرل ایف ڈی ایم اے محمود اسلم وزیر نے شمالی وزیرستان کے متا ئثرین کے ایک نمائندہ وفد کے ساتھ اپنے دفتر میں ان کے مسائل سننے کے بعد کیا ۔ ملا قات میں ڈائریکٹر ایڈمن ریاض خان داوڑ ، ڈائریکٹر اپریشن ناصر درانی اور ماتحت عملے کے تمام متعلقہ اہلکا ر بھی موجود تھے ۔ ائی ڈی پیز کے وفد کی سربراہی ملک غلام خان وزیر کر رہے تھے ۔ ملاقات میں ملک غلام خان نے تفصیل کے ساتھ متا ئثرین وزیر ستا ن کے مسائل پر روشنی ڈالی جن میں رجسٹریشن کے مسائل ، ماہوار مالی امداد میں تعطل ، بکاخیل ائی ڈی اپیز کیمپ میں متا ئثرین کے پانی ، صحت اور خواتین کے لئے باتھ رومزکی فراہمی کا مسئلہ ، شمالی وزیرستان میں کام کرنے والی غیر سرکاری اداروں کے بارے میں متا ئثرین کے خدشات اور واپسی جیسے اہم مسائل زیربحث ائے ۔ ڈائریکٹر جنرل محمود اسلم وزیر نے کچھ مسائل کے بارے میں موقع پر ہی انے عملے کے اہلکاروں کو احکامات جا ری کئے جبکہ کئی ایسے مسائل جن کا تعلق سیفران اور پاک فوج سے تھا ان کے بارے میں متا ئثرین کو فوری طور حل کرانے کی یقین دہا ئی کرائی ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل نے وفد کو اطمینان دلا یا کہ وہ یہاں متا ئثرین کے مسائل کے حل کیلئے شب و روز موجود ہیں اور اگر دفتر کے کسی اہلکار کو سستی کرتے ہو ئے پا یا گیا تو اس کے خلاف سخت ایکشن لیا جا ئے گا

TDPs Updates as of 14-11-2018

  • Post National Action Plan(NAP) Return (Since March 2015 till 14 Nov 2018)
Agency A=VRF Return B=De-regrd Signed VRFs till 17 April A+B=Total VRF Return C=Total De-Registration C-B
NW Tribal Dist 66,778 1,761 68,539 25,596 23,835
SW Tribal Dist 55,747 1,536 57,283 11,231 9,695
Khyber Tribal Dist 75,989 877 76,866 4,646 3,783
Orakzai Tribal Dist. 13,438 118 13,556 17,020 16,902
Kurram Tribal Dist. 16,288 0 16,288 11,371 11,371
Total 228,240 4,292 232,532 69,864 65,572
  • Today Return & Overall TDPs Families Statistics as of 14 Nov 2018
Agency Caseload Non-Verified/Un-Reg Return Verified Return Balance
Today So far Today So far
NW Tribal District 107391 0 21962 0 92374 15017
SW Tribal District 71124 0 82705 0 71124 0
Khyber Tribal District 91689 18 62731 1 90564 1125
Orakzai Tribal District 35823 422 31708 0 35823 0
Kurram Tribal District 33024 0 14514 0 33024 0
Total 339051 440 213620 1 322909 16,142
  • TDPs Families Repatriated from Khost Afg to Tribal Districts/KP
Date Number of Families Arrived No of Total Khost Repatriated Families Returned(De-Reg+VRFs) Existing Balance
Non Verified NADRA Verified (New+Old)
Previous 6664 1487 2891+2286=5177 885+1519=2404 2773
17-05-2018 0 0 0 0 0
Total 6,664 1,487 5,177 2,404 2,773
  • Caseload Shared with Cellular Companies for Disbursement
Company wise Return Agency wise Return Summary
NW TD SW TD Kbyber TD Orakzai TD Kurram TD
Company RCG TCG RCG TCG RCG TCG RCG TCG RCG TCG RCG TCG
Mobilink 112410 108333 0 0 52585 48494 43175 43188 362 363 16288 16288
Telenor 53491 47751 0 0 8470 8432 33585 27691 11436 11628 0 0
Zong 76535 75916 68247 68318 516 525 6516 6015 1256 1058 0 0
Ufone 475 504 0 0 0 0 0 0 475 504 0 0
Grand Total 2,42,911 2,32,504 68,247 68,318 61,571 57,451 83,276 76,894 13,529 13,553 16,288 16,288

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

شاور ( پ ر ) قبائلی علاقوں کے تمام بے گھر افراد با لخصوص شمالی وزیرستان کے آ ئی ڈی پیز کے مسائل کو ترجیحی بنیا دوں پر حل کرینگے اور اس سلسلے میں کسی قسم کی کو ئی کو تاہی برداشت نہیں کی جا ئے گی ۔ متا ئثرین کے ایف ڈی ایم اے کے ذمہ بقایا تمام واجبات ، بند سیموں کا مسئلہ ، بکا خیل کیمپ کے مسائل اور واپسی سمیت تمام مسائل کے بارے میں متعلقہ حکام کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں اور متا ئثرین کو بہت جلد خوشخبری ملے گی ۔ ان خیالات کا ظہار ڈائریکٹر جنرل ایف ڈی ایم اے محمود اسلم وزیر نے شمالی وزیرستان کے متا ئثرین کے ایک نمائندہ وفد کے ساتھ اپنے دفتر میں ان کے مسائل سننے کے بعد کیا ۔ ملا قات میں ڈائریکٹر ایڈمن ریاض خان داوڑ ، ڈائریکٹر اپریشن ناصر درانی اور ماتحت عملے کے تمام متعلقہ اہلکا ر بھی موجود تھے ۔ ائی ڈی پیز کے وفد کی سربراہی ملک غلام خان وزیر کر رہے تھے ۔ ملاقات میں ملک غلام خان نے تفصیل کے ساتھ متا ئثرین وزیر ستا ن کے مسائل پر روشنی ڈالی جن میں رجسٹریشن کے مسائل ، ماہوار مالی امداد میں تعطل ، بکاخیل ائی ڈی اپیز کیمپ میں متا ئثرین کے پانی ، صحت اور خواتین کے لئے باتھ رومزکی فراہمی کا مسئلہ ، شمالی وزیرستان میں کام کرنے والی غیر سرکاری اداروں کے بارے میں متا ئثرین کے خدشات اور واپسی جیسے اہم مسائل زیربحث ائے ۔ ڈائریکٹر جنرل محمود اسلم وزیر نے کچھ مسائل کے بارے میں موقع پر ہی انے عملے کے اہلکاروں کو احکامات جا ری کئے جبکہ کئی ایسے مسائل جن کا تعلق سیفران اور پاک فوج سے تھا ان کے بارے میں متا ئثرین کو فوری طور حل کرانے کی یقین دہا ئی کرائی ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل نے وفد کو اطمینان دلا یا کہ وہ یہاں متا ئثرین کے مسائل کے حل کیلئے شب و روز موجود ہیں اور اگر دفتر کے کسی اہلکار کو سستی کرتے ہو ئے پا یا گیا تو اس کے خلاف سخت ایکشن لیا جا ئے گا ۔

DG FDMA Mr. Mehmood Aslam Wazir listening to the problems of TDPs during a meeting in FDMA office on Monday. The meeting was attended by director operations and director administration too. A delegation of TDPs headed by Mr. Malik Ghulam Khan briefed DG on the issues of TDPs